زندگی کی بوندوں تک

میں آج اس نتیجے پہ پہنچا ہوں کہ اس دنیا میں جتنی تخلیقات ہیں، وہ تمام گفتگو کرتی ہیں۔ یہ گفتگو آپس میں بھی ہو سکتی ہے اور انسان اس کو سن بھی سکتا ہے۔ روایات میں جو باتیں لکھی ہیں، ان میں کافی حد تک سچائی ہوتی ہے۔ درختوں ، پرندوں کا انسانوں کے ساتھ باتیں کرناروایات کا حصہ رہا ہے۔

گرمیوں کی پہلی بارش کے بعد ہونے والی بونداباندی میں اگر آپ دونوں ہاتھ کھولے اور پھیلائے ہوئے چناروں سے ڈھکی سڑک پہ پیدل چل رہے ہوں، آپ گھنٹہ بھر اس بارش میں نہانے کے بعد مکمل طور پہ اپنا آپ ان بوندوں کے حوالے کر چکے ہوں، آپ ان چناروں اور دیوداروں کی گفتگو سن سکتے ہیں۔

آپ چناروں کو اللہ کا شکر ادا کرتے دیکھ سکتے ہیں، ان کی آپ میں مسلراہٹوں کا تبادلہ دیکھ سکتے ہیں۔ ان کے درمیان سائیں سائیں کرتی ہوا کو پیغامات پہنچاتا رنگے ہاتھوں پکڑ سکتے ہیں۔

یہ بارش تو گرمیوں کی تھی، اگر آپ سردیوں کی بارش میں ان چناروں کے ساتھ ہوں، یہ دریافتیں کئی گنا بڑھ جاتی ہیں۔

شایہ یہ بھی ایک وجہ ہے کہ زیادہ تر لوگ پہاڑوں کی طرف بھاگتے اور ان سے عشق لڑاتے ہیں۔

لیکن میرا مدعا ان چناروں کی بڑائی بیان کرنا نا تھا۔

میں یہ بھی نہیں بتانا چاہتا تھا کہ چنار تو بس مجھے پسند ہیں، اس لیے بارشوں میں ان کے سائے میں چلنا مجھے اچھا لگتا ہے۔

بات کچھ یوں بھی نا تھی کہ صرف چنار نہیں، باقی پرندے اور جانور بھی کل مجھے باتیں کرتے نظر آئے۔

ارے مجھے تو بس اتنا کہنا تھا کہ زندگی پانی سے ہے۔ شاید مادہ کی تخلیق میں سب سے پہلا مرکب پانی ہو گا، شاید تمام جانداروں کی زندگی کی ابتدا پانی سے ہوئی ہو گی، شاید حیات کی ضمانت بھی پانی ہی ہے۔ اور سب سے بڑھ کر انسان کی زندگی میں سب سے زیادہ اور سب سے خوشگوار احساسات پانی سے کسی نا کسی حوالے سے جڑے ہیں۔

شایہ یہی وجہ ہے کہ سمندر، دریا ، جھیلیں، اور باقی پانی سے جڑی چیزیں انسان کو بہت اندر تک اترتی محسوس ہوتی ہیں۔

اور میرے گائوں کے بوڑھے اکثر کہا کرتے ہیں کہ بارش کی جگہ زندگی برستی ہے۔ شاید یہ بھی ایک وجہ ہے کہ بارشی علاقوں میں رہنے والوں کی زندگیاں سب سے طویل ہوتی ہیں۔

تو جب بھی بارش ہو، آپ اپنا آپ ان بوندوں کے حوالے کرکے ان مخلوقات کی باتیں سن سکتے ہیں جو ان بوندوں سے زندگی کشید کر رہی ہوتی ہیں۔

کریم ہے وہ ذات جو اپنے بندوں پہ زندگی برساتی ہے۔ ناشکرے ہیں ہم جو زندگی کی ان رمقوں کو ضائع کر دیتے ہیں۔ پانی کی قدر کریں۔

اللہ پاک ہم سب کو مثبت رکھیں۔ آمین۔ بہزاد

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *